میرے ہمسفر، ڈرامہ ریویوز ٹیلی ویژن سیریز پاکستان 2022

میرے ہمسفر، ڈرامہ ریویوز ٹیلی ویژن سیریز پاکستان 2022

Spread the love

راجو اور ترنا کی محبت کی کہانی ہندوستان کے ایک چھوٹے سے قصبے سے شروع ہوتی ہے، ایک عجیب چھوٹے ریستوراں میں۔ بدقسمتی سے، وہ محبت میں پڑ جاتے ہیں اور جب یہ جوڑا بڑے شہر میں چلا جاتا ہے تو الگ ہو جاتے ہیں۔ مہینوں بعد، وہ دوبارہ ملتے ہیں اور پتہ چلا کہ ترنا شادی شدہ ہے۔ ان کا طوفانی رومانس اس وقت ختم ہو جاتا ہے جب ترنا اپنے پہلے بچے کو جنم دیتی ہے۔ لیکن ترنا کو یہ نہیں معلوم کہ اس کا شوہر پہلے ہی اس سے محبت کر چکا ہے۔

میرے ہمسفر

قاسم علی مرید کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم ’میرے ہمسفر‘ ایک شوہر اور بیوی کے درمیان محبت کی کہانی پر مرکوز ہوگی۔ اس میں عصری مسائل اور ایک طاقتور محبت کی کہانی پیش کی جائے گی۔ اسکرپٹ سائرہ رضا نے لکھا ہے جنہوں نے فلم کا پہلا ٹریلر بھی لکھا۔ اصل میں جھوتی کا نام تھا، اس فلم کا نام ٹیزر کے بعد رکھا گیا تھا۔

میرے ہمسفر میں موسیقی روایتی اور جدید، رومانوی اور طنزیہ موضوعات کا امتزاج ہے۔ اس کے گانے آنند بخشی اور کلیان جی آنند جی نے لکھے تھے، جو دونوں پچھلی فلموں میں نظر آئے تھے۔ میرے میں نظر آنے والے اداکار جن میں فرحان سعید بھی شامل ہیں، بہت باصلاحیت ہیں۔ فلم کے پروڈیوسر، سکس سگما پروڈکشنز، کو ان کے کام کے لیے ناقدین کی جانب سے زبردست جائزے ملے ہیں۔

کہانی ایک طاقتور محبت کی کہانی ہے جس میں باپ اور بیٹی شامل ہیں۔ فلم میں معروف اداکار صبا حمید اور ہانیہ عامر نے مرکزی کردار ادا کیا ہے۔ عمر شہزاد اور زویا ناصر بھی کاسٹ کا حصہ ہیں۔ یہ فلم 26 فروری کو اے آر وائی ڈیجیٹل پر نشر ہونے والی ہے۔ یہ ایک نئے چہرے کو جاننے اور نئے چہرے کو دیکھنے کا ایک بہترین طریقہ ہے۔

اس فلم کو دلال گوہا اور بی آر اشارا نے ڈائریکٹ کیا تھا۔ یہ ایک فیملی ڈرامہ ہے جو عصری مسائل سے بھی نمٹا جائے گا۔ یہ ایک زبردست فیملی ڈرامہ ہوگا، جو معمول کے ‘ہندی پیار’ سے ایک خوش آئند تبدیلی ہوگی۔ فلم کا نام پہلے جھوتی تھا، لیکن ٹیزر ریلیز ہونے کے بعد اس کا نام تبدیل کر دیا گیا۔ گانے رومانوی، مزاحیہ اور طنز کا مرکب ہیں، جس میں تاریخی اور عصری ڈرامے کے عناصر شامل ہیں۔

نئے ڈرامے میں فرحان سعید اور ہانیہ عامر محبت کی تکون میں جلوہ گر ہوں گے۔ وہ ایک سال کے طویل وقفے کے بعد دوبارہ اکٹھے ہوں گے۔ دونوں اداکاروں نے سلور اسکرین پر دوسرے پروجیکٹس اور بلاک بسٹر ڈراموں میں ایک ساتھ کام کیا ہے۔ اس سے قبل انہوں نے پیار صوفیانہ میں اسکرین شیئر کی تھی اور میرے ہمسفر میں جوڑی بنائی گئی تھی۔ تاہم، فلم مستقبل میں ترتیب دی گئی ہے، اور دونوں ستارے کہانی کو جاندار بنانے میں کامیاب ہوں گے۔

آنے والے ڈرامے میں فرحان سعید اور ہانیہ عامر کی محبت کی کہانی دکھائی جائے گی۔ دونوں نے کئی فلموں اور ٹیلی ویژن شوز میں ایک ساتھ کام کیا ہے، اور وہ ایک دوسرے کے لیے بہترین میچ ہیں۔ ماضی میں، انہوں نے پیار صوفیانہ میں ایک اسکرین کا اشتراک کیا تھا. دونوں کی جوڑی ’’میرے ہمسفر‘‘ نامی فلم میں بھی تھی۔ اسے دلال گوہا نے ڈائریکٹ کیا تھا۔

یہ فلم آنجہانی شہنشاہوں کے دور پر مبنی ہے اور اس میں جیتندر اور شرمیلا ٹیگور کے درمیان محبت کا مثلث دکھایا گیا ہے۔ اس فلم میں بالی ووڈ کے کئی مشہور ستارے بھی ہیں جن میں فرحان سعید اور ثمینہ احمد شامل ہیں۔ میرے ہمسفر کی کاسٹ میں ہانیہ عامر اور دلال گوہا دونوں شامل ہیں۔ یہ دو تجربہ کار اداکاروں اور ایک خوبصورت کہانی کا ایک اچھا امتزاج ہے۔

اس فلم میں بالی ووڈ کی مقبول گلوکارہ ثمینہ احمد بھی مرکزی کردار میں ہیں۔ وہ رفعت اور نفیس سلطان کا کردار ادا کر رہی ہیں۔ وہ جہاں کی بیٹی ہے، اور سابق صدر کی بیٹی ہے۔ یہ کہانی دو خواتین کے درمیان محبت کا مثلث ہے اور حقیقی واقعات پر مبنی ہے نہ کہ افسانے پر۔ یہ ایک رومانوی تھرلر بھی ہے، اور اس میں پلاٹ کے متعدد عناصر ہیں۔

بچپن میں، راجو ہماچل پردیش کے ایک گاؤں میں رہتا ہے اور اسے استاد انور نامی ایک سابق مجرم سے محبت ہو جاتی ہے۔ یہ نوجوان اپنے والد کا مقروض ہے اور بیلوں کی ایک جوڑی خریدنے کے لیے پیسے بچانے کا ارادہ رکھتا ہے۔ وہ اپنے آپ کو پیار کا اہل ثابت کرکے اپنا قرض چکانا چاہتا ہے۔ اگرچہ اس کے والد ایک غیر معتبر تاجر تھے، لیکن راجو اور اس کی ماں کے درمیان تعلقات بہت خوبصورت تھے۔

راجو اور اس کی شادی کے بارے میں ایک سادہ محبت کی کہانی۔ مرکزی کردار راجو اور ترنا ہیں۔ فلم کے پہلے ہاف میں راجو اور ترنا منگنی کر چکے ہیں اور اپنے رشتے میں خوش ہیں۔ دوسرے ہاف میں جوڑے کی علیحدگی ہو جاتی ہے اور راجو ترنا سے شادی کر لیتا ہے۔ فلم کے تیسرے نصف کے دوران، دونوں کردار دوبارہ اکٹھے ہو جاتے ہیں، اور رومانس پھول جاتا ہے۔ پھر، ان کی محبت کی کہانیاں اپنی اگلی منزل کی طرف جاری رہتی ہیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published.